اس مضمون کی روایات حضرات علیؓ، ابن عباسؓ او رجابرؓ سے مختلف الفاظ کے ساتھ مروی ہیں، جسےشیعہ حضرات خلیفة الرابع حضرت علی ابن ابی طالبؓ کے فضائل و مناقب میں بہت شدومد کے ساتھ پیش کرتے ہیں۔ذیل میں اس مضمون کی تمام روایات اور ان کےتمام طرق کا علمی جائزہ پیش کیاجاتا ہے، تاکہ مذکورہ حدیث کا مقام و مرتبہ واضح ہوجائے۔ واللہ المستعان!
غازی عزیر
1987
  • جنوری
ملّا علی قاری حنفی (م1014ھ)نے حدیث ''اَنَا مَدِینَۃُ العِلمِ وَعَلِی بَابُھَا'' کو اپنی''موضوعات کبیر''میں ذکر کیا ہے، آپ فرماتے ہیں:''اسے ترمذی نے اپنی جامع میں نقل کرکے لکھا ہے ، یہ حدیث منکر ہے۔'' سخاوی کہتے ہیں: '' اس کی صحت کی کوئی وجہ موجود نہیں۔'' یحییٰ بن معین فرماتے ہیں، ''یہ بالکل جھوٹ ہے، اس کی کوئی اصل نہیں۔'' ابوحاتم اور یحییٰ بن سعید القطان کی بھی یہی رائے ہے۔ ابن الجوزی نے اسے موضوعات میں نقل کیا ہے۔ ذہبی وغیرہ نے اسے موقوف قرار دیاہے۔ ابن دقیق العید کہتے ہیں: ''یہ حدیث ثابت نہیں او ریہ بھی کہا جاتا ہے کہ یہ باطل ہے........ الخ''1
غازی عزیر
1987
  • مارچ
حضرت جابرؓ کی روایت ، جس کے آخر میں ''فمن اراد الدار فلیات الباب'' کے الفاظ مروی ہیں، کا طریق اس طرح ہے:''انبأنا اسمٰعیل بن احمد السمرقندی قال انبأنا اسمٰعیل بن مسعدة قال انبأنا حمزة بن یوسف قال انبأنا ابواحمد بن عدی قال حدثنا العنمان ابن بکر ون البلدی و محمد بن احمد بن المؤمل و عبدالملک بن محمد قال سمعت جابر بن عبداللہ قال سمعت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم یوم الحدیبیة وھو اخذ بصبغ علی.......................... انا مدینة العلم..................... الخ''
غازی عزیر
1987
  • فروری
بعد از خطبہ مسنونہ... اللہ تعالیٰ کا ارشادِ گرامی ہے!
﴿وَعَدَ اللَّهُ الَّذينَ ءامَنوا مِنكُم وَعَمِلُوا الصّـٰلِحـٰتِ لَيَستَخلِفَنَّهُم فِى الأَر‌ضِ كَمَا استَخلَفَ الَّذينَ مِن قَبلِهِم وَلَيُمَكِّنَنَّ لَهُم دينَهُمُ الَّذِى ار‌تَضىٰ لَهُم وَلَيُبَدِّلَنَّهُم مِن بَعدِ خَوفِهِم أَمنًا يَعبُدونَنى لا يُشرِ‌كونَ بى شَيـًٔا وَمَن كَفَرَ‌ بَعدَ ذ‌ٰلِكَ فَأُولـٰئِكَ هُمُ الفـٰسِقونَ ٥٥ ﴾... سورة النور
عبدالجبار شاکر
2012
  • مارچ
پاکستان کو گذشتہ دنوں اپنی تاریخ کے بدترین سیلاب کا سامنا کرنا پڑا، بڑے پیمانے پرہلاکت وبربادی ہوئی اور بستیوں کی بستیاں صفحۂ ہستی سے مٹ گئیں۔انہی دنوں شمالی وزیر ستان میں اپنوں کی مسلط کردہ جنگ کے نتیجے میں بڑے پیمانے پر اہل اسلام کو اپنے گھرچھوڑکر دربدر ٹھوکریں کھانا پڑیں۔ان اہم قومی مراحل پر ہمارے حکمرانوں کا کیا کردار رہا، اور اُنہوں نے اپنے فرائض کہاں تک نبھائے؟ ایسے مواقع پر اسلامی تاریخ اور خلافتِ راشدہ سے ہمیں کیا سبق ملتاہے؟
قاری روح اللہ مدنی
2014
  • اکتوبر
خلافت میں خلیفہ کا تعین عوام کی بجائے اہل حل وعقدکرتے ہیں اور خلیفہ کے تعین کے لئے یہ اقدام 'بیعت خاصہ' کہلاتا ہے جو خلیفہ کی تعیناتی کے ساتھ اس کی اطاعت کی بیعت بھی ہوتی ہے جس کی توثیق و عہد بعد میں عامتہ المسلمین کی 'بیعت ِعامہ' کی صورت ہوتی ہے۔ لیکن خلیفہ کے درست تعین کا حقیقی دارومدار کسی بھی خارجی ودیگر منفعت کی بجائے دین الٰہی کے نفاذ کے لئے اَصلح ترین فرد کی صورت ہوتا ہے۔
عطاء اللہ جنجوعہ
2009
  • جون
(سیدنا ابو بکر، سیدناعمر اور سیدنا عثمان﷢)
سیدنا علی﷜کی نظر میں!
’’ سیدنا علیؓ اصحاب ِ ثلاثہ کو ظالم اورغاصب سمجھتے تھے، نعوذ باللّٰہ ! ‘‘... یہ جملہ بڑا جھوٹ، حقائق سے بغاوت اور سیدنا علی ؓپر بہتان ہے، جبکہ حقیقت اس کے برعکس ہے۔ دلائل ملاحظہ ہوں :
غلام مصطفیٰ خاں
2017
  • جولائی
(سیدنا ابو بکر، سیدناعمر اور سیدنا عثمان﷢)
سیدنا علی﷜کی نظر میں!
’’ سیدنا علیؓ اصحاب ِ ثلاثہ کو ظالم اورغاصب سمجھتے تھے، نعوذ باللّٰہ ! ‘‘... یہ جملہ بڑا جھوٹ، حقائق سے بغاوت اور سیدنا علی ؓپر بہتان ہے، جبکہ حقیقت اس کے برعکس ہے۔ دلائل ملاحظہ ہوں :
غلام مصطفیٰ ظہیر
2017
  • جولائی
ہمارے جمہوریت نواز دوست عموماً یہ تاثر دیتے ہیں کہ:

1. سقیفہ بنی ساعدہ اس دَور کا پارلیمان تھا۔

2. جہاں انصار و مہاجرین نے سرکردہ حضرات نے جو اس دَور کے قبائلی نظام کے مطابق اپنے اپنے قبیلہ کے نمائندہ کی حیثیت رکھتے تھے۔ حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ کے انتخاب میں حصہ لیا اور
ادارہ
1981
  • مارچ
  • اگست
نام و نسب و منصب:

بقول امام النسب حضرت زبیر بن بکار، قبل از اسلام آپ رضی اللہ عنہ کا نام عبدالکعبہ تھا۔ اور قبولِ اسلام کے بعد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے آپ رضی اللہ عنہ کا نام عبداللہ رکھا۔
عبدالرحمن عزیز
1985
  • فروری
سطور ذیل میں محدث کے مدیر اعلیٰ حافظ عبد الرحمٰں مدنی کا ''اسلام کے سیاسی تصور'' کے موضوع پر وہ انٹرویو دیا جا رہا ہے جو نمائندہ ہفت روزہ ''بادبان'' لاہور میاں شعیب الرحمٰن صاحب نے حافظ صاحب موصوف سے کیا۔ کتابت کی بعض اہم غلطیوں اور آخری دو صفحات میں عبارت کی غلط جڑائی نے اِسے ناقص بنا دیا تھا۔ قارئین اسے صحیح صورت میں ملاحظہ کریں۔ (ادارہ) لانبے قد، سیاہ داڑھی اور عالمانہ وجاہت رکھنے والے حافظ
عبد الرحمن مدنی
1981
  • جولائی