• فروری
2009
عبدالرؤف ظفر
پاکستان کے معروف محقق پروفیسر ڈاکٹر شیر محمد زمان چشتی کے سالہا سال کے مطالعہ اور علمی تجربہ کا نچوڑ 'نقوشِ سیرت' ہے جو 234 صفحات پر مشتمل ہے۔ خوبصورت جلد میں یہ کتاب نہایت دیدہ زیب ہے۔ 2007ء میں اسے 'پروگریسو بکس' اُردو بازار لاہور نے شائع کیا ہے۔کتاب کی ابتدا میں ملک کے معروف سکالر اُستادِ محترم پروفیسر ڈاکٹر خالد علوی رحمة اللہ علیہ، معروف ادیب اور عربی زبان کے فاضل اجل پروفیسر ڈاکٹر خورشید رضوی اورممتاز دانش ور پروفیسر عبدالجبار
  • اگست
  • ستمبر
2002
حسن مدنی
دینی رسائل وجرائد نے 'فتنہ انکارِ حدیث' کی تردید میں نمایاں کردار ادا کیا ہے۔ رسائل میں شائع ہونے والے مضامین کا یہ امتیاز ہے کہ ان میں معاشرتی رجحانات پر ماہ بہ ماہ تنقید و تبصرہ ہوتا رہتا ہے اور ان کے ذریعے معاشرے میں پائے جانے والے افکار کی ساتھ ساتھ وضاحت و تردید او رمطلوبہ ذہن سازی کی جاتی ہے۔
  • نومبر
2012
ثریا بتول علوی
مصنّف : پروفیسر خورشید عالم ...صفحات: 560 ... اشاعت: 2011ء
پیش نظر کتاب کے اس جائزے کی مصنفہ برسہا برس گورنمنٹ کالج برائے خواتین سمن آباد میں علوم اسلامیہ کی تدریس کے بعد اسی شعبہ کی سربراہی پر فائز رہنے کے ناطے اس میدان میں وسیع تجربے کی حامل ہیں۔
  • ستمبر
2005
حِوار سے مراد باہمى گفتگو، كسى عنوان پر مباحثہ كرنا اوركسى موضوع سے متعلق سوال و جواب كرنا ہے،كيونكہ حِوار باب مفاعلة كا مصدر ہے جس ميں مشاركت كا معنى پايا جاتا ہے- حَاوَرَ يُحَاوِرُ مُحَاوَرَةً وَّحِوَارًَا قرآن مجيد ميں يہ لفظ اسى مفہوم ميں وارد ہوا ہے: سورة الكہف ميں دو بهائيوں كا تذكرہ كرتے ہوئے اللہ تعالىٰ ارشاد فرماتے ہيں :
وَكَانَ لَهُ ثَمَرٌ‌ فَقَالَ لِصَاحِبِهِ وَهُوَ يُحَاوِرُ‌هُ أَنَا أَكْثَرُ‌ مِنكَ مَالًا وَأَعَزُّ نَفَرً‌ا ﴿٣٤﴾وَدَخَلَ جَنَّتَهُ وَهُوَ ظَالِمٌ لِّنَفْسِهِ قَالَ مَا أَظُنُّ أَن تَبِيدَ هَـٰذِهِ أَبَدًا ﴿٣٥﴾ وَمَا أَظُنُّ السَّاعَةَ قَائِمَةً وَلَئِن رُّ‌دِدتُّ إِلَىٰ رَ‌بِّي لَأَجِدَنَّ خَيْرً‌ا مِّنْهَا مُنقَلَبًا ﴿٣٦﴾ قَالَ لَهُ صَاحِبُهُ وَهُوَ يُحَاوِرُ‌هُ أَكَفَرْ‌تَ بِالَّذِي خَلَقَكَ مِن تُرَ‌ابٍ ثُمَّ مِن نُّطْفَةٍ ثُمَّ سَوَّاكَ رَ‌جُلًا ﴿٣٧...سورۃ الکہف
  • جولائی
1995
شفیق کوکب
اکتوبر 85ء تا اکتوبر 90ء۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔جلد نمبر 16 تا20
قارئین کرام!آپ کا محبوب مجلہ"محدث" عرصہ دراز سے آپ کے زیر مطالعہ ہے۔اگرچہ بعض احباب چند سال قبل بزم قارئین میں شامل ہوئے ہوں گے۔
مجلہ ہذا کے مطالعہ میں یہ بات آپ نے محسوس کی ہے کہ بحمدللہ اس میں کوئی بات بلادلیل،محض مسلکی پسند و ناپسند کی بناء پر شائع نہیں کی جاتی۔بلکہ اس کے ساتھ جس نظریے کی بھی پرکھ ہوتی ہے ۔اس کی میزان صرف اور صرف کتاب وسنت ہوتے ہیں۔علاوہ ازیں مجلہ کا یہ بھی دستور رہا ہے۔اور جس کو برقرار رکھنے کی از حد کوشش کی جاتی ہے کہ اپنا زور بحث،فروعات کی بجائے زیادہ تر ان اصولوں اور نظریات پر صرف کیا جائے جو کسی ذہن کی تشکیل میں بنیادی کردارادا کرتے ہیں۔اس حوالے سے بہت ممکن ہے کہ ہمارا یہ مجلہ عام قارئین کےلیے بوجھل ہو،تاہم اس کے لئے اللہ تعالیٰ نے ہمیں جو قارئین عطا فرمائے ہیں وہ ذی شعور ہونے کے ساتھ ساتھ علم وتحقیق کے بھی شیدائی ہیں اور ان کاایک بڑا حصہ منصفانہ مزاجی کا حامل ہے
  • دسمبر
1999
شفیق کوکب
فکرو نظر:۔
ارشاد الحق اثری مولانا ۔دینی تعلیم و تحقیق اور عصری تقاضےدسمبر98،2تا6۔
صلاح الدین یوسف حافظ ۔المیہ کارگل کااسلامی حل!اگست 99،2تا8۔
صلاح الدین یوسف حافظ۔افغانستان سوڈان پر امریکی جارحیت طالبان کوگزارشات،ستمبر98۔2تا5۔
صلاح الدین یوسف حافظ۔تحریک نفاذ  شریعت محمدی مالاکنڈڈویژن،فروری 99۔2تا7۔
صلاح الدین یوسف حافظ ۔دینی مدارس مقاصد اور پس منظر خدمات مئی 95۔2تا9۔
صلاح الدین یوسف حافظ۔عالم اسلم کو درپیش سنگین مسائل ،جنوری99۔2تا3۔
صلاح الدین یوسف حافظ۔مدارس دینیہ غلط فہمیوں اور شبہات کا ازالہ ،جولائی95۔2تا10۔
صفی الرحمٰن مباکپوری مولانا۔ر مضان کا مقصد۔۔۔اللہ کا تقویٰ ۔دسمبر99۔2تا3۔
ظفر علی راجا ڈاکٹر۔ذاتی معاملہ اور قانون ۔جولائی96۔2تا5۔
محمود الرحمٰن فیصل ڈاکٹر ۔چیچنیا ۔۔۔جہاد آزادی ۔جنوری95 2تا9۔
محمود الرحمٰن فیصل ڈاکٹر ۔مالاکنڈ میں نفاذ شریعت کی حقیقت ۔مارچ 95۔2تا12۔
  • مئی
  • جون
1995
چودھری عبدالحفیظ
کتاب"اشاریہ تفہیم القرآن" نظر سے گزری۔فاضل مرتبین جناب پروفیسر ڈاکٹر خالد علوی صاحب ڈائیرکٹر ادارہ علوم اسلامیہ پنجاب یونیورسٹی لاہور اور آنسہ پروفسیر ڈاکٹر جمیلہ شوکت صاحب چیئرمین شعبہ علوم اسلامیہ پنجاب یونیورسٹی لاہور کسی تعارف کی محتاج نہیں۔انہوں نے بجا طور پر بروقت اہل علم،ریسرچ سکالرز،قرآن وسنت کے طالب علموں اور دین کاشغف رکھنے والوں کی آواز پر لبیک کہا اور"تفہیم القرآن" کا اشاریہ  ترتیب دے کر علمی اضافہ کیا۔
واقعتاً قرآن سے استفادہ کرنے اور خصوصاً "تفہیم القرآن" سے مستفید ہونے کےلئے اشاریہ کی ضرورت ایک مدت سے محسوس کی جارہی تھی مگر اس میں کوئی صاحب علم آگے نہ بڑھا حتیٰ کہ "الفضل للمقدم"کے مصداق یہ سعادت فاضل مرتبین کے حصے میں آئی۔جس کے لئے وہ تمام اہل علم کی طرف سے مبارکبار کے مستحق ہیں۔جزاھما اللہ عنا خیرا الجزاء
  • جون
2008
صلاح الدین یوسف
آج کل الیکٹرانک میڈیا (ٹی وی،انٹرنیٹ،ریڈیو وغیرہ) اور پرنٹ میڈیا (اخبارات ورسائل) نشرواشاعت کے جدید اور انتہائی مؤثر ذرائع ہیں جن کے ذریعے لاکھوں اور کروڑوں افراد تک اپنی آواز پہنچائی جا سکتی اور ان کے دل و دماغ کو متاثر کیا جا سکتا ہے ۔ان ذرائع ابلاغ کے موجد چونکہ ملحد اور سیکولر قسم کے لوگ ہیں جو کسی قسم کے اخلاقی اُصول اور ضابطۂ حیات کے قائل نہیں
  • جون
2008
حسن مدنی
موجودہ دور ترقی، انقلابات، میڈیا اور اطلاعات کا دور ہے۔ اگرچہ ایک صدی قبل انسان نے بجلی، فون، ایندھن، نقل وحمل اور مواصلات کے دوسرے ذرائع دریافت کرلئے تھے، تاہم دریافت وایجادکے اس سفر میں جو کامیابی اور تیزی گذشتہ چند برسوں میں دیکھنے میں آئی ہے، اس کی تیزرفتاری نے واقعتا عقل کو حیران وپریشان کردیا ہے۔
  • دسمبر
2002
شفیق کوکب
مبشر حسین ،حافظ توسل و استعانت کیا ہے ؟ II دسمبر ۹تا۳۶
عبدالرحمن کیلانی،مولانا توسل و استعانت کیا ہے ؟ I جولائی ۱۷تا۳۳
عبدالرحمن کیلانی،مولانا شرک اور اس کی مختلف مروّجہ صورتیں II مارچ ۳۴ تا ۴۲
  • دسمبر
2003
محمد شاہد حنیف
جنوری۲۰۰۳ء تا دسمبر ۲۰۰۳ء... جلد ۳۵ ؍ عدد ۱ تا ۱۲

ایمان و عقائد

اسلم صدیق؍ مبشر حسین قربِ قیامت کی پیش گوئیاں (رپورٹ مذاکرہ) مئی ۶۷تا۸۵
  • مئی
2005
سعید مجتبیٰ سعیدی
اس شمارے ميں دو مضامين شائع كيے جارہے ہيں جن ميں كهڑے ہوكر كهانے پينے اور كهڑے ہوكر پیشاب كرنے كى اجازت كو پيش كيا گيا ہے اور ان سلسلے ميں اجازت پر مبنى تمام احاديث كو يہاں ذكر كيا گيا ہے ليكن ان احاديث كا مدعا اس سے زيادہ نہيں كہ يہ بتايا جائے كہ كهڑے ہوكر كهانا پينا يا پیشاب كرنا مطلقاً حرام نہيں ہيں بلكہ ضرورت كے پيش نظر شریعت سے ايسا كرنے كا جواز مل سكتا ہے۔
  • مارچ
1987
اسرار احمد سہاروی
میں نے ''شاہنامہ بالاکوٹ'' شروع سے آخر سے آخر تک پڑھ ڈالا ہے۔ مجھے سب سے زیادہ جس چیز نے متاثر کیا، وہ اس کا عنوان ہے۔مصنف نےایسے لوگوں کو یاد کیا ہے جس کا حق بہت زیادہ فائق تھا اور جن کی طرف سے ہمارے تمام شعراء دانستہ یا نادانستہ مجرمانہ چشم پوشی کررہےتھے۔بالاکوٹ کے یہ باعزیمت جانباز مجاہد اگر یاد آوری اور فخر کے قابل نہیں تو پھر کون لوگ ہوسکتے ہیں؟ یہ تحریک بھی اپے عوامل و 
  • جون
2008
عبد الملک
دوستوں نے اب تک جوگفتگو کی ہے، ماشاء اللہ پورے اخلاص اور پوری تیاری سے اُنہوں نے اپنے خیالات کا اظہار فرمایا ہے۔ میں اس اہم مجلس کے انعقاد پر ملی مجلس شرعی کو خراجِ تحسین پیش کرتا ہوں ۔ اس سلسلے میں میری مختصرگزارشات حسب ِذیل ہیں :1983ء میں جماعت ِاسلامی میں اس موضوع پر اختلاف ہوا اور 1983ء سے 1991ء تک ہم نے وقتاً فوقتاً اس موضوع پر مباحثے منعقد کیے
  • جون
2008
محمد رمضان سلفی
الحمد ﷲ رب العالمین والصلوٰۃ والسلام علی خاتم النبیین وبعد! ...
ہمارے پیش نظر دو چیزیں ہیں، ایک تصویر کی شرعی حیثیت کیا ہے ؟اور دوسری یہ کہ تصویری میڈیا میں اسلامی عقائد و افکار کی تبلیغ و ترویج کی غرض سے حصہ لینا جائز ہے یا نہیں؟ ان ہر دو مسائل کا حکم بھی الگ الگ ہے۔
  • نومبر
  • دسمبر
1975
عزیز زبیدی
نقوش اقبال مترجم : علامہ سید ابوالحسن علی ندوی

صفحات : 294

قیمت : 50؍13 روپے
  • ستمبر
2005
عبد الرحمن مدنی
آپ حضرات كى تشريف آورى اور اس فكرى مجلس كو رونق بخشنے پر ميں ٹرسٹ كى انتظاميہ كى طرف سے آپ كو خوش آمديد كہتا ہوں- آج كا يہ سيمينار وقت كے ايك اہم موضوع كے بارے ميں ہے- 'دہشت گردى' ايك ايسا ناسور ہے، جس كى روك تهام اشد ضرورى ہے- دنيا اس وقت دہشت گردى كى مذمت پر متحد ہے اور چند سالوں سے دنيا كے بعض بڑے ممالك اس كے خلاف اپنى جنگ كا آغاز كرچكے ہيں ليكن دہشت گردى كے بارے ميں كچھ كہنے سے قبل اس امر كا تعين اشد ضرورى ہے كہ دہشت گردى كا حقيقى مصداق كيا ہے
  • جون
2008
محمد یوسف خان
تصویر کسی حیوان کا ایسا نمونہ تیار کرنے کا نام ہے جو اس حیوان کی شکل واضح کر دے، وہ نمونہ خواہ مجسم ہو یا مسطح، سایہ دار ہو یا غیر سایہ دار۔تخلیقِ خداوندی کی مشابہت پیدا کرنا اور اس کی نقالی کرنا تصویر کہلاتا ہے ۔''التصاویر جمع التصویر ھو فعل الصورۃ والمراد بہ ھنا ما یتصور مشبھا بخلق اﷲ من ذوات الروح مما یکون علی حائط أوستر کما ذکرہ ابن المالک''یہ مشابہت اور نقالی عام ہے
  • ستمبر
2006
ادارہ
'محدث' جون 2006ء کا مستقل شمارہ حدود قوانین کے خلاف میڈیا مہم کے جوابات پر مشتمل تھا جبکہ گذشتہ شمارے میں تفصیل سے حکومت کی مجوزہ ترامیم پر شرعی وقانونی نقطہ نظر پیش کیا گیا زیر نظر شمارے میں شائع ہونے والا جائزہ دراصل اس بل کا ہے جو 21؍اگست کو باقاعدہ قومی اسمبلی میں پیش کیاگیا اور اسے مجلس عمل نے پھاڑ کر اس پر بحث کرنے سے ہی انکار کردیا۔
  • اگست
  • ستمبر
2002
عبدالرشید عراقی
قرآن مجید اگرچہ ایک واضح او رکھلی ہوئی کتاب ہے، اس میں کسی قسم کا غموض و ا خفا نہیں ہے۔ لیکن اس میں اسلام کی تعلیمات کی پوری تفصیل اور تمام جزئیات کا اِحاطہ نہیں ہوسکتا تھا۔ اس لئے بہت سے احکام مجمل یا کلیات کی شکل میں ہیں۔ جن کی وضاحت و تشریح اور کلیات سے جزئیات کی تصریح رسول اللہ ﷺ نے اپنے قول و عمل سے فرمائی۔
  • دسمبر
2008
زاہد الراشدی
محدث کے تصویر نمبر کی اشاعت کے بعد بعض اہل علم نے اپنے موقف ارسال کئے۔ زیر نظر شمارہ میں اس نوعیت کے تین مضامین بالترتیب شائع کئے جارہے ہیں ، جن میں باہم متضاد موقف بھی اختیار کیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ یہاں پیش کردہ بعض دلائل کا تصویر نمبر میں بھی جائزہ لیا جا چکا ہے۔ اس بحث میں جو اہل علم مزید حصہ لینا چاہیں ، ان کے لئے 'محدث' کے صفحات حاضر ہیں ۔
  • دسمبر
2008
اقبال کیلانی
محدث کے ’تصویر نمبر‘ پر ایک دوسرے موقف کی ترجمانی کرتے ہوئے ’سلسلہ تفہیم السنہ‘ کے فاضل مصنف مولانا اقبال کیلانی نے اپنی رائے کا اظہار فرمایا ہے اور علماے کرام سے اپنے فتویٰ پر نظرثانی کی دردمندانہ درخواست کی ہے۔ اس سلسلے میں مزید مضامین اور بحوث وردود کا سلسلہ ’محدث‘ میں جاری ہے جس کے لئے ادارہ محدث نے بعض دیگر اہل علم سے بھی اس موضوع پر لکھنے کی درخواست کی ہے۔
  • مئی
2005
عمران ایوب لاہوری
حالات كى نوعيت كچھ اس طرح كى ہے كہ جدت پسندى اور مغربى تہذيب سے مرعوبيت روز بروز مسلمانوں ميں مہلك وائرس كى طرح پھیلتى جارہى ہے جس كى ايك كڑى يہ بهى ہے كہ ايئرپورٹس، ہوٹلز اور ريسٹورنٹس وغيرہ ميں مغربى طرز كے پيشاب خانے اور باتھ روم بنائے جارہے ہيں جن ميں بہرصورت كهڑے ہوكر ہى پيشاب كرنا پڑتا ہے۔
  • دسمبر
2007
شفیق کوکب
اسرائیل فاروقی،محمد حدیث و سنت کی اہمیت و حجیت جنوری ۸ تا۱۹
حافظ عبدالرشید اظہر حفاظت ِ حدیث میں صحابہ کرامؓ کا کردار مارچ ۲۱ تا۳۵
حافظ زبیر علی زئی روایت ِ حدیث میں امام صنعانی کا معتبر ہونا مئی ۴۰ تا ۵۲
  • دسمبر
2008
شفیق کوکب

حدیث و سنت

ابوجابر دامانوی، ڈاکٹر سرڈھانکنا اور عمامہ پہننا سنت ِ رسول صلی اللہ علیہ وسلم ہے جنوری 54۔39
محمد زبیر ،حافظ کیا صحیحین کی صحت پر' اجماع' ہے؟ مارچ 48۔26
سمیع اللہ فراز، حافظ ذخیرئہ حدیث کی تعبیر وتدوین نوکی سازش ستمبر 27۔12
عمران ایوب، حافظ انکارِ حدیث کے نئے شبہات کا جائزہ اکتوبر 30۔18۱۲