نیل الاوطار / ۴۹:۲ میں فتح الباری شرح البخاری سے نقل کیا ہے کہ:۔
''بعض حنفیہ نے اذانِ سحری کی یہ تاویل کی ہے کہ یہ (اذا سحری) حقیقی اذان نہ تھی جو الفاظ مقررہ سے متعارف ہے بلکہ وہ تذکیر اور منادی کرنا تھا کما یقع للناس الیوم (جیسا کہ آج کل مروج ہے۔)''
ادارہ
1971
  • مارچ
رياض كى مسجد مُتعب بن عبد العزيز كے امام وخطيب فضيلة الشيخ ڈاكٹر صالح بن فوزان آل فوزان سابق مفتى اعظم سعودى عرب شيخ عبد العزيز بن باز كے شاگرد ہيں- المعہد العالي للقضاء ميں ڈائريكٹر كى ذمہ داياں انجام دينے كے علاوہ آپ رياض كے اسلامك لاء كالج ميں پروفيسر بهى رہے ہيں- ريٹائرمنٹ كے بعد فتوىٰ او رريسرچ كے لئے آپ كو سعودى كبا رعلما بورڈ كا ممبر نامزد كيا گيا، ايسے ہى رابطہ عالم اسلامى كے فقہ كمپليكس كے بهى آپ ركن ہيں-
شیخ صالح الفوزان
2005
  • مارچ
(زیر نظر مقالہ مدیر"محدث" حافظ عبدالرحمٰن مدنی کی کلیۃ الشریعۃ (جامعہ لاہور اسلامیہ) کے ہفتہ وار اجتماع میں کی گئی ایک تقریر ہے۔جس میں گزشتہ دنوں "محدث" میں شائع شدہ "دین میں بدعات" کے موضوع پر مسئلہ کے بعض پہلوؤں کی وضاحت کی گئی تھی ۔موجودہ شکل میں اسے ٹیپ سے منتقل کرکے ھدیہ قارئین کیا جارہا ہے۔(ادارہ)
ادارہ
1989
  • جون
حضرت محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اس جہانِ رنگ و بو میں بنی نوع انسان کے لیے راہنما بن کر تشریف لائے۔۔۔آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنی حیاتِ مبارکہ میں ہر نیک اور اچھے کام کی طرف امتِ مسلمہ کی رہنمائی فرمائی اور ہر برائی سے باز رہنے کی تلقین کی۔۔۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم اپنے ہر خطبے کے آغاز میں فرماتے: "ان شرالامور محدثاتها" یعنی دین میں نیا کام جاری کرنا بدترین امور میں سے ہے۔
ابوبکر الجزائری
1988
  • جون

اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات ہے جو ضلالت و جہالت سے مبرا اور دلائل و براہین سے آراستہ ہے، اسلام کے تمام احکام پایۂ تکمیل کو پہنچ چکے ہیں۔اور اس دین مبین میں خرافات وبدعات کے لیے کوئی جگہ نہیں۔ اب کوئی نام نہاد عالم دین، مفتی یا محدث ایسا نہیں جو اس دین مبین اور صاف و شفاف چشمے میں بدعات و خرافات کا زہر ملائے لیکن افسوس ہے

عمران الہی
2012
  • جنوری
اگرچہ مجالس میلاد سال بھر میں وقتاً فوقتاً منعقد ہوتی ہی رہتی ہیں، بلکہ اس کی وسعت اور ہمہ گیری کا تو یہ عالم ہوچکا ہے کہ ہر خوشی کی تقریب میں، ہر مصیبت و تکلیف سے نجات و راحت حاصل کرنے اور ہر آرام و راحت کے میسر ہونے پر مجالس مولود منعقد کی جاتی ہیں، لیکن اس مہینے میں زیادہ اہتمام اور خصوصیت کے ساتھ یہ مجالس منعقد کی جاتی ہیں۔
سید داؤد غزنوی
2002
  • جون
محسنِ انسانیت صلی اللہ علیہ وسلم کی پیدائش ربیع الاوّل میں ہوئی جس کے معنی ہیں'موسم بہار کی پہلی بارش'۔جس طرح بارش سے مردہ زمین سرسبز و شاداب ہوجاتی ہے، اسی طرح آپؐ کی تشریف آوری سے مردہ دِلوں کو تروتازگی نصیب ہوئی۔ ظلم و جور کرنے والے عدل و انصاف کے داعی اور کفر و شرک کی تاریکی میںغرق رہنے والے شمع ِ توحید کے پروانے بن گئے۔
عطاء اللہ جنجوعہ
2007
  • اپریل