• جولائی
1983
اکرام اللہ ساجد
حضرت ابوہریرہؓ بیان کرتے ہیں ، رسول اللہ ﷺ نے فرمایا:''بینما انا نائم اتیت بخزائن الارض فوضع فی کفی سواران من ذھب فکبر علی فاوحی الی ان انفخہما فنفختہما فذھبا فاولتہما الکذابین الذین انا بینہما صاحب صنعاء و صاحب الیمامة'' 1''اس دوران جبکہ میں سویا ہوا تھا (یعنی خواب میں) میں زمیں کے خزانوں پر لایا گیا اورمیری ہتھیلی میں سونے کے دو کڑے رکھے گئے، جو مجھے بوجھل محسوس ہوئے تو میری طرف وحی کی گئی، ان پر پھونک ماریے ، پس جب میں نے ان پر پھونکا تو یہ اڑ گئے۔ میں نے (اپنے اس خواب کی) تعبیر یہ کی کہ (کڑے) دو جھوٹے (مدعیان نبوت) ہیں جن میں سے ایک تو صاحب صنعاء (اسود عنسی) ہے او ردوسرا صاحب یمامہ (مسیلمہ کذاب) ہے!''