ڈاونلوڈ

آن لائن مطالعہ

آن لائن مطالعہ
  • فروری
2007
عبدالعزیز بن باز
اُمت ِمسلمہ اس وقت اندوہناك صورتحال سے دوچار ہے- اسے داخلى طور پر كئى كمزوريوں اور كوتاہيوں كا سامنا ہے تو بيرونى طور پر وہ كئى سازشوں اور عسكرى جارحيتوں كا شكار ہے- ايسى پريشان كن صورتحال ميں مسلم اُمہ كے عظيم الشان اجتماع 'حج بيت اللہ' اور روحانى مركز 'مكہ معظمہ' سے ان مسائل كى كيا تشخيص كى جاتى اور ان كے حل كے لئے كيا لائحہ عمل پيش كيا جاتا ہے؟
  • فروری
2007
شیخ احمد فہمی
زير نظر مضمون سلفيّت كو در پيش عالمى صورتحال بالخصوص عرب ممالك ميں در پيش حالات كے تناظر ميں تحرير كيا گيا ہے- اس مضمون ميں سلفيت كو 'اُصول پسند اسلام' يا 'اپنے مسائل كے حل كيلئے كتاب وسنت تك براہ راست رسائى' كے مفہوم ميں استعمال كيا گيا ہے جس كے ايك اہم مظہر كے طورپر اہل مغرب سعودى عرب اور اس كے بعض عرب ممالك ميں پائى جانے والى دينى لہركو پيش كرتے اور اسے 'وہابيت' سے موسوم كرتے ہيں -
  • فروری
2007
مختلف اہل علم
سوال: اگر كوئى شخص صرف عاشورا كا روزہ ركهتا ہے اور ساتھ نويں محرم كا روزہ نہيں ملاتا تو اس كے بارے ميں شريعت مطہرہ كا كيا حكم ہے ؟جواب : شيخ الاسلام ابن تيميہ اس كے متعلق فرماتے ہيں :" عاشو را كا روزہ ايك سال كے گناہوں كا كفارہ ہے اور صرف عاشورا كا روزہ ركهنا مكروہ نہيں ہے-"
  • فروری
2007
محمد رفیق چودھری
ارتداد كے لغوى معنى 'لوٹ جانے' اور 'پهر جانے' كے ہيں - شرعى اصطلاح ميں ارتداد كا مطلب ہے: "دين اسلام كو چهوڑ كر كفر اختيار كرلينا-" يہ ارتداد قولى بهى ہوسكتا ہے اور فعلى بهى- 'مرتد' وہ شخص ہے جو دين ِاسلام كو چهوڑ كر كفر اختيار كرلے-اسلا م ميں مرتد كى سزا قتل ہے جو صحيح احاديث، تعامل صحابہ اور اجماعِ اُمت سے ثابت ہے-
  • فروری
2007
صہیب حسن
سعودى عرب كے حاليہ دورے كے دوران يہ خبر سننے ميں آئى كہ سعودى عرب كے نئے فرمانروا شاہ عبداللہ اپنے پيش رو شاہ فہد كے مدينہ منورہ ميں 'قرآن كمپليكس' كى طرح خود بھى اسلام كى خدمت كے كسى عظيم الشان منصوبہ كا آغاز كرنا چاہتے ہيں اور اس مقصد كے لئے 'حديث كمپليكس' كا منصوبہ اُنہيں پيش كيا گيا ہے۔
  • فروری
2007
یوسف انور
راقم كے والد مرحوم حاجى عبدالرحمن پٹوى علماے كرام كے بے حد معتقد تهے، علما كى خدمت و تكريم اور ميزبانى ان كا روزمرہ معمول تها- ہمارے غريب خانہ پرمختلف اوقات ميں جو علماء و صلحا مہمان رہے، ان كى فہرست طويل تر ہے جن ميں سے بعض كے اسماے گرامى كچھ اس طرح ہيں : صوفى محمد عبداللہ اوڈانوالہ، حافظ محمد عبداللہ محدث روپڑى، مولانا عبدالمجيديزدانى،