ڈاونلوڈ

آن لائن مطالعہ

  • اکتوبر
1989
عبدالقدوس سلفی
الحمد لله وحده والصلاة والسلام عى من لا نبى بعده، اما بعد فاعوذ بالله من الشيطان الرجيم

﴿إِنَّ الَّذينَ يَكفُرونَ بِاللَّهِ وَرُسُلِهِ وَيُريدونَ أَن يُفَرِّقوا بَينَ اللَّهِ وَرُسُلِهِ وَيَقولونَ نُؤمِنُ بِبَعضٍ وَنَكفُرُ بِبَعضٍ وَيُريدونَ أَن يَتَّخِذوا بَينَ ذ‌ٰلِكَ سَبيلًا ﴿١٥٠﴾ أُولـٰئِكَ هُمُ الكـٰفِرونَ حَقًّا وَأَعتَدنا لِلكـٰفِرينَ عَذابًا مُهينًا ﴿١٥١﴾ وَالَّذينَ ءامَنوا بِاللَّهِ وَرُسُلِهِ وَلَم يُفَرِّقوا بَينَ أَحَدٍ مِنهُم أُولـٰئِكَ سَوفَ يُؤتيهِم أُجورَهُم وَكانَ اللَّهُ غَفورًا رَحيمًا ﴿١٥٢﴾... سورة النساء
  • اکتوبر
1989
ثنااللہ مدنی
اسلام کےزریں عہد اول سے لے کر آج تک ہر دور اور ہر زمانہ میں نسل مسلمانوں کا متفقہ طور پر اجماعی عقیدہ چلا آیا ہے کہ کتاب الٰہی ہر قسم کے حوادثات و تغیرات اور تبدیلیوں کے شائبوں سے محفوظ ومامون ہے ۔

رُوئے زمین پر صرف شیعہ ایک ایسی مبہوت قوم ہے جس کے زعم باطل کے مطابق قرآن کریم اپنی اصلی شکل وصورت میں ہمارے درمیان موجود نہیں بلکہ اس کا کثیر حصہ زمانہ کے دست برد ہو چکا ہے۔
  • اکتوبر
1989
صدیق حسن خان
سورۃا لفا تحہ

نام:

حدیث ابوہریر ہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ میں آیا ہے رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فر ما یا
  • اکتوبر
1989
محمد رفیق اثری
حدیث مصراۃ اور ا بوہریرۃ رضی اللہ تعالیٰ عنہ :

ابو ہر یرۃ رضی اللہ تعالیٰ عنہ فر ما تے ہیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فر ما یا :

"لا تصروا الابل والغنم فمن ابتاعها بعد فانه بخير النظرين بعد ان يحلبها ان شاء امسك وان شاء ردها وصاح تمر"
  • اکتوبر
1989
عبدالرحمن عاجز
جو اپنی جاں کی بازی لگائے
تعجب کیا اگر وہ جیت جا ئے!
اُنھیں سے ہم نے رنج و غم اُٹھا ئے
  • اکتوبر
1989
غازی عزیر
شیعہ حضرات کے دعاوی اور اُن کے جوابات :

شیعہ حضرات کا ایک دعوی ہے کہ "رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو اپنے نفس سے قرار دے کر انھیں تما م صحابہ کر م رضوان اللہ عنھم اجمعین پر فضیلت و بر تری بخشی ہے ۔" ان زعما ء کے جو ب میں شارح تر مذی ؒ علامہ عبد الرحمٰن مبارک پو رؒی فر ما تے ہیں ۔
  • اکتوبر
1989
حمیداللہ عبدالقادر
اور اُن کی الجامع الصحیح کا تعارف اور صحیحین کا موازنہ

ولادت 194ھ وفات :256ھ

نا م ونسب :
  • اکتوبر
1989
عبدالرشید عراقی
حدیث کی صیانت و حفاظت اور اُس کی ترقی وتر ویج اور اشاعت میں برصغیر پاک و ہند میں علمائے اہلحدیث نے جو گراں قدر علمی خدمات سر انجام دی ہیں وہ تاریخ اہلحدیث میں سنگ میل کی حیثیت رکھتی ہیں فسیح الکل حضرت مولیٰنا سید محمد نذیر حسین محدث دہلویؒ (م1320ء)نے دہلی میں اور علامہ حسین بن محسن القاری یمانی (م1327ء)نے بھوپال میں حدیث کی نشرواشاعت میں جو نمایاں کردار ادا کیا ہے اس کی مثال برصغیر پاک وہند میں مشکل ہی سے ملے گی
  • اکتوبر
1989
ادارہ
اہلحدیث ایک اصلاحی تحریک ہے جس نے برصغیر کی تاریخ میں اگر ایک طرف سکھا شاہی اور مغربی استعمار کے خلاف جہاد کی روشن مثالیں قائم کر کے اسلام اور مسلمانوں کی حفاظت کا فریضہ انجام دیا تو دوسری طرف دعوت وتعلیم کے میدان میں مذہبی جمود اور فرقہ وارا نہ تعصب کے بالمقابل اسلاف کی قربانیوں کی یادیں بھی تازہ کیں اسی کا نتیجہ ہے کہ پاک وہند کے ہر حصہ میں اُن کے تبلیغی مراکز اور تعلیمی درسگاہ ہیں قل اللہ وقال رسولہ صلی اللہ علیہ وسلم کی صداؤں سے آباد نظر آتی ہیں