ڈاونلوڈ

آن لائن مطالعہ

آن لائن مطالعہ
  • جنوری
1994
ادارہ
(سطور ذیل میں ہم اپنے محترم دوست ڈاکٹر محمود الرحمٰن فیصل کی طرف سے وزیر اعظم بے نظیر بھٹو کے نام ایک کھلا خط معمولی کانٹ چھا نٹ سے شائع کر رہے ہیں جس میں پاکستان کو درپیش سیاسی مسائل کا ایک جا مع مگر مختصر جائزہ لیا گیا ہے۔یہ ایک درد مند دل کی آواز ہے امید ہے کہ اسے اسی جذبہ سے پڑھا جا ئے گا ۔اللہ تعالیٰ ہم پر رحم فرمائے ۔آمین!)
  • جنوری
1994
چودھری عبدالحفیظ
﴿يـٰأَيُّهَا الَّذينَ ءامَنوا لا تَقولوا ر‌ٰ‌عِنا وَقولُوا انظُر‌نا وَاسمَعوا وَلِلكـٰفِر‌ينَ عَذابٌ أَليمٌ ﴿١٠٤﴾ ما يَوَدُّ الَّذينَ كَفَر‌وا مِن أَهلِ الكِتـٰبِ وَلَا المُشرِ‌كينَ أَن يُنَزَّلَ عَلَيكُم مِن خَيرٍ‌ مِن رَ‌بِّكُم وَاللَّهُ يَختَصُّ بِرَ‌حمَتِهِ مَن يَشاءُ وَاللَّهُ ذُو الفَضلِ العَظيمِ ﴿١٠٥﴾... سورة البقرة

ترجمہ:۔اے ایمان لانے والو! گفتگو کے دوران رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو" رَاعِنَا " نہ کہا کرو بلکہ" انظُرْنَا "کہاکرو اور خوب یاد رکھو اور کافروں کے لیے دردناک عذاب ہے۔"
  • جنوری
1994
رمضان سلفی
محدثین کرام ،حدیث و سنت کو ایک ہی معنی میں استعمال کرتے ہیں ان کے ہاں رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے قول و عمل اور آپ کی تقریر نیز آپ سے متعلق کوئی صفت یا حالت کو"حدیث"کہا جا تا ہے اور سنت کاالفاظ تین معانی میں استعمال ہو تا ہے۔کبھی یہ لفظ حدیث کے معنی میں استعمال ہوتا ہے اور رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے قول وعمل اور آپ کی تقریر کو سنت کہا جا تا ہے اور کبھی اہل علم اسے احکام میں استعمال کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ کام سنت ہے یعنی فرض نہیں ۔
  • جنوری
1994
مفتی محمد عبدہ الفلاح
(215تا303ھ)

ابو عبدالرحمٰن ،احمد بن شعیب بن علی بن سنان بن بحر الخرسانی ،النسائی صاحب "السنن"

"نساء"کی طرف نسبت:
  • جنوری
1994
ابو شہزاد
(قرآن مجید انبیاء کرام علیہ السلام کی شریعتوں کے اختلاف کے باوجودبھی نہیں ایک امت قرار دیتا ہے۔)

﴿وَإِنَّ هـٰذِهِ أُمَّتُكُم أُمَّةً و‌ٰحِدَةً وَأَنا۠ رَ‌بُّكُم فَاتَّقونِ ﴿٥٢﴾ فَتَقَطَّعوا أَمرَ‌هُم بَينَهُم زُبُرً‌ا كُلُّ حِزبٍ بِما لَدَيهِم فَرِ‌حونَ ﴿٥٣﴾... سورة المؤمنون

"(اے پیغمبر ) تم یہ سب ایک ہی جماعت ہو اور میں تمھارارب ہوں پس میرا تقویٰ اختیار کرو پس لوگوں نے اپنے دین کو آپس میں ٹکڑے ٹکڑے کر لیا ۔
  • جنوری
1994
ابوبکر الجزائری
(مولانا کوثر نیازی کے جواب میں)

سب سے پہلے عورت کی سر براہی کے جواز یا عدم کے بارے میں اس وقت کی مختلف علمی شخصیتوں نے اخبارات و رسائل میں مضائین لکھنا شروع کئے جب محترمہ فاطمہ جناح صدر محمد ایوب خان کے مقابلہ میں میدان سیاست میں اتریں ۔
  • جنوری
1994
نسیم اختر
مجھے اعتراف ہے کہ جناب کی ادارت میں شائع ہو نے والا مجلہ محدث تحقیقات کا مرقع اور نکا ت علمیہ سے لبریز ہو تا ہے ۔مواد کثیرہ سے انتقاء کے باوصف بعض اصحاب مقالات کے خیالات ان کے دوائر مطالعہ کا مظہر ہوتے ہیں اور قارئین کو تنقید و تعاقب کی دعوت دیتے ہیں ۔

سابقہ شمارہ میں اس عاجزہ نے"برصغیر میں محدثین کی مساعی "مقالہ از غازی عزیر کے ایک حوالہ پر تعاقب لکھا تھا جس کے شائع ہونے پر میری حوصلہ افزائی ہو ئی ۔
  • جنوری
1994
ثریا بتول علوی
تاریخ عالم میں بے شمار ایسے افراد ہو گزرے ہیں جنہوں نے اپنے دور میں مختلف علمی ،فنی عسکری کار نامے انجام دے کر شہرت پائی۔ان میں بادشاہ ہیں فوجی جرنیل ہیں دانشور ہیں مفکر ہیں ،مشہور شعراء حکماء اور فاتحین عالم ہیں یقیناً ایسے لوگوں کی زندگیاں پر کشش اور قابل توجہ ہوسکتی ہیں ۔مگر ان میں سے دراصل بڑے لوگ وہ ہیں جنہوں نے اپنے علم اور عمل کی ضیا پا شیوں سے حقیقی معنوں میں دنیا کو منور کیا۔یہ نفوس قدسیہ انبیاکرام علیہ السلام ہیں
  • جنوری
1994
سعید احمد
نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی بعثت ،بعثت عامہ ہے۔آپ صلی اللہ علیہ وسلم كَافَّةً لِلنَّاسِ بَشِيرًا وَنَذِيرًا بنا کر بھیجے گئے۔آپ کا الٰہ رب العالمین،کتاب ذکرللعالمین اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم خود رحمۃ اللعالمین ہیں۔
لاکھ ستارے ہر طرف،ظلمت شب جہاں جہاں
اک طلوع آفتاب صلی اللہ علیہ وسلم دشت وچمن سحر سحر
  • جنوری
1994
عبدالعزیز القاری
(زیر نظر تحریر میں فاضل مضمون نگار نے بڑے دیانتدارانہ طریقے سے "سبعہ احرف" سے مراد کے تعین کی کوشش کی ہے۔اور بظاہر اس دقیق بحث کو اپنے آسان طرز بیان سے انھوں نے بڑی حد تک سہل کردیا ہے ۔اسلوب نگارش بڑا ہی منطقی اور اصولی ہے۔ اس تفصیلی مضمون کی ایک قسط اس سے قبل پچھلے شمارے میں بھی شائع ہوچکی ہے جو اپنے مقام پر ایک مستقل حیثیت کی حامل ہونے کے ساتھ ساتھ اس بحث سے بھی گہرا تعلق رکھتی ہے۔
  • جنوری
1994
عبدالرشید عراقی
آسمان تیری لحد پہ شبنم فشانی کرے

( 7جنوری 1994ءتقریبا 11بجے صبح حافظ ثناءاللہ مدنی صاحب شیخ الحدیث "جامعہ لاہور اسلامیہ"(المعروف جامعہ رحمانیہ) نے یہ اندوہناک خبر دی کہ مولانا عبیداللہ رحمانی مبارکپوری وفات پاگئے ہیں اور انہوں نے اپنی مسجد میں غائبانہ نماز جنازہ بھی ادا کی ہے۔انا للہ واناالیہ راجعون
  • جنوری
1994
عبدالجبار شاکر
نام مجلہ القلم

ناشر ادارہ علوم اسلامیہ ،جامعہ پنجاب،لاہور

صفحات 200+21