ڈاونلوڈ

آن لائن مطالعہ

آن لائن مطالعہ
  • جون
2015
حسن مدنی
بعض نمازی حضرات علاقائی سطح پر مساجد میں زکوٰۃ جمع کرنے کی کمیٹیاں بنا لیتے ہیں اور اس کو نادار وفقرا میں تقسیم کرتے ہیں۔ ایسے ہی بعض کاروباری لوگ بھی زکوٰۃ کا ایک مشترکہ نظام تشکیل دیتے ہیں اور اپنی زکوٰۃ کے ثمرات کو وسیع تر کرنے کے لیے اس مال سے سرمایہ کاری کرکے، اس سے نیکی کے بڑے کام کرنا چاہتے ہیں۔ اس دوسری صورت کے بارے میں ایک سوال نامہ شرعی رہنمائی کے لیے موصول ہوا، جس میں دریافت کیا گیا کہ
  • جون
2015
شیخ صالح المنجد
رمضان میں شیطانوں کا جکڑا جانا؟

سوال: رمضان میں شیطانوں کو قیدکردیا جاتا ہے،اس کے باوجود رمضان میں برائیاں کیوں ہوتی ہیں؟

جواب: جی ہاں رمضان کریم میں بھی ہوسکتا ہے کہ شیطان وسوسہ ڈالیں اور اسی طرح جادوگربھی رمضان میں کام کرتے ہیں
  • جون
2015
ابوسلمان شاہ جہاں پوری
مولانا ابو الکلام آزا دؔبہت ذہین تھے اور حسّاس بھی!ابھی صرف 14، 15 برس کی عمر تھی، نئی نئی اور مختلف مضامین کی کتابیں پڑھتے تھے اور اسی تیزی کے ساتھ ذہن اور خیالات پر اس کے اثرات بھی ہوتے تھے۔اسی طرح ذہانت اور گھر پر اساتذہ کی تعلیم کا اثر ہوتا تھا۔ سوسائٹی کے نظّارے، چہل پہل، طرح طرح کے رنگ روپ پر سرسری نظر بھی ،بدلتے ہوئے موسموں کی طرح چھپ کر ذہن وذوق اورعادات پر اثر ڈالتی تھی
  • جون
2015
محسن فارانی
1. آغاز کرتے ہیں ہم لفظ 'عوام' سے؛ عہدِ شاہ جہانی سے جب ریختہ میں، جو اُردوے معلیٰ (اعلیٰ لشکر) یعنی 'شاہی فوج' میں بولی جانے کے باعث 'اُردو' زبان کہلائی، لفظ 'عوام' جمع مذکر تھا، یعنی ''عوام سمجھتے ہیں۔''، ''عوام یہ کہتے ہیں۔'' جیسے جملے عام تھے۔ یوں ساڑھے تین سو برس لفظ عوام مذکر بولا جاتا رہا۔ ویسے بھی فرمودۂ ربانی ﴿اَلرِّجَالُ قَوّٰمُوْنَ عَلَى النِّسَآءِ ﴾کی رعایت سے اور برصغیر کی آبادی میں 50 فیصد سے زیادہ مرد ہونے کے باعث لفظ 'عوام'مؤنث ہو ہی نہیں سکتا تھا۔
  • جون
2015
شفیق الرحمٰن زاہد
جادو گری اور آسیب کا اثر بلاشبہ ایک شیطانی عمل ہے۔ قرآنِ کریم کے مطابق یہ خبیث انسانوں اور جنوں کا فعل ہے۔ تاریخی طور پر اس کفریہ فعل کا ارتکاب سب سے زیادہ یہود و نصاریٰ نے کیا ہے۔ اہل اسلام بھی اس گناہ کے مرتکب ہوئے ہیں، حالاں کہ تینوں سماوی مذاہب میں اس کی شدیدترین وعید سنائی گئی ہے۔

جس طرح اللّٰہ تعالیٰ نے ہر مرض کی دوا پیدا کی ہے اسی طرح اس شیطانی عمل کا علاج بھی اس نے اپنے بندوں کو سجھایا ہے۔
  • جون
2015
محمد نعمان فاروقی
كسی بھی کامیاب ملك یا علاقے كی دو خصوصیات ہوتی ہیں:

1 ۔امن 2 ۔ خوش حالی

دنیا نے ترقی و عروج كی جس قدر بلندیوں كو چھوا تو بالآخر انہی دو چیزوں كو بنیاد تسلیم كیا، اور ترتیب بھی یہی ركھی كہ پہلے امن، پھر خوش حالی۔