ڈاونلوڈ

آن لائن مطالعہ

آن لائن مطالعہ
  • فروری
1984
اکرام اللہ ساجد
روزنامہ جنگ 27 جنوری سئہ 1984ء کے صفحہ اول پر چوکٹے میں درج شدہ ایک انتہائی نمایاں عبارت ہمارے پیشِ نظر ہے، جس کی چار جلی سرخیاں ہیں ۔۔۔ ان میں سے دو مندرجہ ذیل ہیں:

1۔ "علامہ اقبال اور قائدِاعظم نے قانون سازی کے متعلق کتاب و سنت کا نام نہیں لیا"
  • فروری
1984
اسرار احمد سہاروی
باوجود دردِ پیہم دل کا ماتم کیا کریں
خستگی تیری رضا ہے چشمِ پُرنم کیا کریں
تیرے سنگِ آستاں پر جھک گئی اپنی جبیں
  • فروری
1984
عبدالرؤف ظفر
بخاری شریف کی اس حدیث سے معلوم ہوا کہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کے مبارک دور میں باقاعدہ فوجیوں کے نام درج کر کے ان کو جنگوں میں لڑنے کے لیے بھیجا جاتا تھا۔ یہ کام بھی آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنی موجودگی میں کرایا۔ اس کے علاوہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کے خطوط اور معاہدات ہیں جو آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے دیگر قوموں سے کیے۔ وہ بھی گویا آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے اپنے لکھائے ہوئے تھے۔ ممانعت کی صورت میں ان کے لکھوانے کا جواز ہی نہیں تھا۔
  • فروری
1984
عبدالرحمن عزیز
کتاب و سنت اور علمائے سلف کی روشنی میں

التوسل والوسيلة" کا لغوی معنیٰ ہے بذریعہ عمل تقرب حاصل کرنا، جیسا کہ علامہ جوہری نے صحاح کے ص456 پر تحریر فرمایا ہے:

توسل اليه بوسيلة اى تقرب اليه بعمل
  • فروری
1984
عبدالرشید عراقی
شیخ نورالحق دہلوی رحمۃ اللہ علیہ (1073ھ)

حضرت شیخ نورالحق حضرت شیخ عبدالحق کے صاجزادے تھے۔ آپ 983ھ میں پیدا ہوئے۔ آپ نے مکمل تعلیم اپنے نامور باپ سے حاصل کی۔ تکمیلِ تعلیم کے بعد آپ کو عہدہ قضاء پیش کیا گیا جس کو آپ نے قبول کر لیا اور آپ نے یہ کام بخیر و خوبی سر انجام دیا۔ مگر اس عہدۃ جلیلہ پر زیادہ عرصہ تک متمکن نہ رہے۔