کچھ مصطفے ٰ سے مانگ نہ کچھ مرتضے ٰؓسے مانگ

دست سوال غیر کے آگے نہ کر دراز

اللہ کے سوا نہیں حاجت روا کوئی

قار ہے کارساز ہے مشکل کشا بھی ہے

سب انبیاء اولیا ء سائل اسی کے ہیں

ہر کس فنا پذیرہے ہر شے فنا سر شت

طوفاں میں ناخدا پہ بھروسہ نہ کر علیم

جو مانگنا ہے خالق ارض و سماسے مانگ

داتا ترا خدا ہے تو ہر شے خدا سے مانگ

اپنی ہر اک طلب اسی حاجت رواسے مانگ

تدبیر مشکلات اسی مشکل کشا سے مانگ

تو بھی اسی شہنشہ ارض وسما سے مانگ

باقی ہے ذات کبریا تو کبریا سے مانگ

اپنی سلامتی فقط اپنے خداسے مانگ