ڈاونلوڈ

آن لائن مطالعہ

آن لائن مطالعہ
  • مئی
1978
ادارہ
﴿وَقالَ الَّذينَ كَفَر‌وا لِلَّذينَ ءامَنُوا اتَّبِعوا سَبيلَنا وَلنَحمِل خَطـٰيـٰكُم وَما هُم بِحـٰمِلينَ مِن خَطـٰيـٰهُم مِن شَىءٍ ۖ إِنَّهُم لَكـٰذِبونَ ﴿١٢﴾... سورة العنكبوت

''اور منکرین حق مسلمانوں سے کہتے ہیں کہ ہماری راہ چلو اور تمہارے گناہوں کا (بوجھ) ہم خود اٹھائیں گے حالانکہ یہ لوگ ذرہ برابر بھی ان کے گناہوں (کا بوجھ) نہیں اٹھانے کے، یہ واقعہ ہے کہ یہ لوگ جھوٹے ہیں۔''
  • مئی
1978
عزیز زبیدی
﴿لَقَد جاءَكُم رَ‌سولٌ مِن أَنفُسِكُم عَزيزٌ عَلَيهِ ما عَنِتُّم حَر‌يصٌ عَلَيكُم بِالمُؤمِنينَ رَ‌ءوفٌ رَ‌حيمٌ ﴿١٢٨﴾... سورة التوبة

''(لوگو!) تمہارے پاس تم ہی میں سے ایک رسول آئے ہیں، تمہارے تکلیف ان پر شاق گزرتی ہے اور ان کوتمہاری بہبود کاہوکا ہے (اور) وہ مسلمانوں پرنہایت درجے شفیق (اور)مہربان ہے۔''
  • مئی
1978
عزیز زبیدی
«عن ابن عباس ان رسول اللہ صلی اللہ علیه وآله وسلم قدم المدینة فوجد الیہود صیاما یوما عاشوراء فقال لھم رسول اللہ صلی اللہ علیه وآله وسلم ماھذا الیوم الذی تصومونة فقالوا ھذا یوم عظیم اتجی اللہ فیه موسیٰ و قومه و غرق فرعون و قومه قصامه موسیٰ شکراً فنحن تصومه فقال رسول اللہ صلی اللہ علیه وآله وسلم فنحن احق و اولی بموسیٰ منکم فصامه رسول اللہ صلی اللہ علیه وآله وسلم و امر بصیامه» (بخاری ۔مسلم)
  • مئی
1978
عزیز زبیدی
طلاق ثلاثہ کی بابت ماہنامہ محدث (ماہ محرم 1398ھ) میں راقم الحروف کا ایک فتویٰ شائع ہوا تھا جس میں ہم نے ضمناً حضرت عمرؓ کی وہ روایت بھی ذکر کی تھی جس سے حضرت عمرؓ کا اپنے پہلے مؤقف سے رجوع ثابت ہوتاہے،اس پر حضرت مولانا عبدالحمید ابوحمزہ (نیو سعید آباد) نے تعاقب فرمایا ہےکہ :

''رجوع والی حدیث صحیح نہیں ہے ، کیونکہ اس میں راوی خالد بن یزید بن ابی مالک باپ بیٹا دونوں ضعیف ہیں، دونوں کےمتعلق آیا ہے
  • مئی
1978
عبدالعزیز بن باز
سماحۃ الشیخ عبدالعزیز بن عبداللہ بن باز حفظہ اللہ ۔ سعودی عرب کے ایک متبحر عالم دین ہیں۔ دیگر اداروں کے علاوہ آپ ادارہ فتویٰ سازی کے رئیس عام او رنگران اعلیٰ ہیں۔ آپ کے اکثر فتاوے عرب رسالوں اور اخبارات کی زینت بنتے رہتے ہیں۔ گزشتہ سال عربی کے ایک اخبار ''عکاز'' عدد نمبر 3560 بروز ہفتہ موافق 28؍2۔1396ھ میں ایک خبر شائع ہوئی تھی
  • مئی
1978
برق التوحیدی
پچھلی مرتبہ ہم نے قاضی صاحب کی خدمت میں چند ایک گزارشات پیش کی تھیں اور چند خدشات کی طرف اشارہ بھی کیا تھا لیکن جب قاضی صاحب کے مضمون کی دوسری قسط (جوسرقہ کے متعلق ترجمان القرآن شمارہ 4 جلد88 میں ہے) سامنے آئی تو حیرت کی انتہا نہ رہی کہ بعینہ وہ خطرات منڈ لا رہے ہیں او روہی مفسدات و منکرات سراٹھاتے نظر آتے ہیں جن کی طرف ہم نے اشارہ کیا تھا۔
  • مئی
1978
محمد سلیمان اظہر
فلسطین جسے قدیم زمانے میں ماٹو پھر سرگون اعظم کے زمانہ میں ارض ایمورائٹ۔ یونانیوں کی تاریخ میں سیریا، رومیوں نے فلسطائنا، فونیقیوں کی مناسبت سےفونیشیا۔ بابلی نوشتوں میں کنعان، بمعنی نشیبی زمین۔ عربوں نےشام بمعنی بایاں۔ ترکوں نے سنجاک آف یروشلم یا ولایت بیروت۔ یہود نے ارض اسرائیل اور عیسائیوں نے ارض مقدس کہا ہے۔ آج سیاسی لحاظ سے دنیا کا اہم ترین قطعہ ارض بنا ہواہے۔
  • مئی
1978
طالب ہاشمی
ارمغان حرم : جناب راسخ عرفانی

ضخامت : 96 صفحات مجلدمع رنگین گردپوش

کاغذ، کتاب، طباعت نہایت اعلیٰ: