میرے پسندیدہ۔۔

اس صفحہ کو پسند کرنے کے لیے لاگ ان کریں۔

ضروری وضاحت

ماہنامہ ’’محدث‘‘ ایک دینی و عملی مجلہ ہے۔ احباب دینی جرائد و رسائل کے سلسلہ میں پیش آمدہ مالی مشکلات سے بخوبی آگاہ ہیں۔ ان کا اجرا صرف دینی جذبہ کے تحت تبلیغ اسلام کے مقصد سے کیا جاتا ہے اور خریدار جو سالانہ چندہ دیتے ہیں وہ صرف ایک ادنیٰ مالی تعاون ہوتا ہے جس پر انحصار نہیں کیا جا سکتا۔

محدث کے لئے دس روپے سالانہ موجودہ مہنگائی کے دور میں ایک معمولی زر تعاون ہے لیکن ہم نے دینی تبلیغ و اشاعت کے جذبہ سے قارئین کے لئے یہی کافی سمجھا ہے ہم دوسرے رسالوں سے مقابلہ کی نیت سے نہیں بلکہ صرف حقیقتِ حال کے اظہار کے لئے یہ وضاحت کر رہے ہیں کہ ’’محدث‘‘ لیتھو کی بجائے نفیس کتابت اور فوٹو آفسٹ کی حسین طباعت کا حامل ہوتا ہے جس پر فی ہزار تین گنا زیادہ خرچ آتا ہے۔ اسی طرح سفید کاغذ عام اخباری کاغذ سے دوگنا سے بھی زیادہ مہنگا ہے اور پھر سرورق آرٹ پیپر نہایت اعلیٰ قسم استعمال کیا جاتا ہے جس پر بلاکوں کی رنگین چھپائی ہوتی ہے۔ یہ سب کچھ ایک علمی اور دینی پرچہ کے وقار کے لئے ہے۔ نیز اخباری کاغذ جلد بوسیدہ ہو جاتا ہے جس سے علمی مواد جل ضائع ہونےے کا خطرہ ہوتا ہے۔ قارئین کرام کو معلوم ہے کہ ان حالات میں ہمارے اخراجات بہت ہیں جن کی وجہ سے ہم مزید رعایات کے متحمل نہیں ہو سکتے۔

ہمارا ارادہ تھا کہ غریب اور نادار طلبہ کے لئے الگ فنڈ قائم کر کے ان سے نصف زر سالانہ (پانچ روپے) وصول کیا جائے لیکن یہ کام نہ ہو سکا۔ ہمارے رعایتی زر سالانہ کے لئے وضاحت نہ ہونے کی وجہ سے کئی اصحا رعایت کا مطالبہ کرتے ہیں جو ہمارے لئے بارِ گراں ہوتا ہے۔

امید ہے کہ احباب اس وضاحت کو کافی سمجھیں گے اور زر سالانہ دس روپے ہی ارسال فرمائیں گے۔ (ادارہ)

’’محدث‘‘ کے لئے زر سالانہ کی تفصیلات

مغربی پاکستان کے لئے: 10 روپے                     مشرقی وسطی کے لئے: 1 پونڈ 5 شلنگ (ہوائی ڈاک)

مشرقی پاکستان کیلئے: 11 روپے (ہوائی ڈاک)                 مغربی ممالک کے لئے: ۱ پونڈ 10 شلنگ (ہوائی ڈاک)

اگلا شمارہ بذریعہ وی۔ پی۔ پی۔ آئے گا

جن احباب کو ’’محدث‘‘ کا شمارہ نمونہ کے طور پر بھیجا گیا ہے انہیں آئنددہ شمارہ برائے مارچ (محرم ۱۳۹۱ھ) بذریعہ وی۔ پی۔ پی۔ ۵۰۔۱۰ روپے میں بھیجا جائے گا۔

امید ہے کہ ہمارے کرم فرما اسے وصول کر کے دینی جذبہ اور تعاون کا ثبوت دیں گے اور اسے واپس کر کے ادارہ کو زیر بار ہونے سے بچائیں گے۔

جو احباب وی پی کے حق میں نہ ہوں وہ ادارہ کو فوری اطلاع دے کر ممنون فرمائیں۔ (ادارہ)