ڈاونلوڈ

آن لائن مطالعہ

آن لائن مطالعہ
  • مئی
1971
عبدالغفار اثر

﴿وَقالَ الرَّ‌سولُ يـٰرَ‌بِّ إِنَّ قَومِى اتَّخَذوا هـٰذَا القُر‌ءانَ مَهجورً‌ا ٣٠﴾.. سورة الفرقان

یہ بات کس قدر المناک اور باعثِ تعب ہے کہ قرآنِ کریم جیسی جامع و مانع اور فصیح و بلیغ کتاب ہمارے پاس ماجود ہے اس کی فصاحت و بلاغت کے غیر مسلم بھی معترف ہیں لیکن اس کے باوجود اس کی تعلیم و تدریس کے سلسلے میں اس کے شایانِ شان اہتمام نہیں کیا گیا۔

  • مئی
1971
صدیق حسن خان

عید میلاد النبیﷺ:

رسول اللہﷺ کی ولادت اور وفات اسی مہینے کی بارہ تاریخ کو ہوئی تھی۔ اس ماہ میں میلاد النبیﷺ کی محفلیں اور مجلسیں کرنے کی کوئی شرعی دلیل نہیں۔ شیخ احمد سرہندی، مجد الف ثانی، شاہ ولی اللہ محدث دہلوی اور قاضی محمد بن علی شوکانی نقشبندی و دیگر علما رحمہم اللہ تعالیٰ أجمعین ہمیشہ اس امر کو بدعت و ضلالت قرار دیتے چلے آئے ہیں۔

  • مئی
1971
عبدالسلام کیلانی
یہ ہے کہ  عورتوں کو بغیر کسی تفہیم و تفسیر کے صرف سادہ قرآن مجید کی تعلیم دی جائے۔ ان کی نظر میں یہی رائے عمدہ ترین اور یہی نظریہ باقی تمام نظریات سے درست ہے، ہمارے آباؤ اجداد۔۔۔۔ جو ہم سے بہتر تھے۔۔۔۔۔ ان کی روشن بھی یہی تھی۔ تعلیم نسواں ان کے اخلاق کو بگاڑ دیتی ہے، کیونکہ ناخواندہ عورت شیطان سیرت مردوں کی دسترس سے دور رہتی ہے، بدیں وجہ کہ قلم بھی۔
  • مئی
1971
ادارہ
یَا اَیُّھَا الرَّجُلُ المُعَلِّمُ غَیْرَہ       ھَلَّا لِنَفْسِکَ کَانَ ذَا التَّعْلِیْم
اے دوسروں کو تعلیم دینے والے         یہ وعظ و ارشاد تیرے لئے کیوں نہیں؟
اِبْدَأْ بِنَفْسِکَ فَانْھََ عَنْ غَیِّھَا        فَاِذَا انْتَھَتْ عَْہُ فَاَنْتَ حَکِیْمْ
  • مئی
1971
مولا کریم بخش
بطور نمونہ چند آیات

آپ بعض وہ آیات کریمہ ملاحظہ فرمائیں جن کی تفسیر و تشریح حضور علیہ الصلوٰۃ والسلام، صحابہ کرام اور تابعین علیہم الرحمۃ والرضوان کی تفسیر کے بغیر ہرگز ہرگز ممکن ہی نہیں۔ ورنہ سوائے عقلی ڈھکوسلوں کے اور کچھ نہیں ہو گا۔ جس کا نتیجہ دنیا و آخرت میں رسوائی ہے۔ اب  بتلائیے کہ ذیل کی آیات کی تفسیر کیا کی جائے؟
  • مئی
1971
ریاض الحسن نوری
چند سال قبل پنڈی میں مسلمانوں کی ایک بین الاقوامی کانفرنس منعقد ہوئی تھی۔ اس میں دیگر اہلِ علم و فضل حضرات کے علاوہ یادش بخیر جناب مسعود صاحب نے بھی جو اس وقت محکمۂ اوقاف کے ناظمِ اعلیٰ تھے، ایک مقالہ پڑھا تھا۔ مسعود صاحب کے معتقدات ڈھکے چھپے نہیں، وہ اشترا کی ذہن کے حامل اور تجدد پسند ہیں۔
  • مئی
1971
عبدالرحمن عاجز
رنگِ گل، رنگِ چمن، رنگ بہاراں دیکھا      ذرہ ذرہ سے ترا حسن نمایاں دیکھا
دیدۂ کوہ سے بہتے ہوئے چشمے دیکھے          سینۂ بحر سے اُٹھتا ہوا دھواں دیکھا
پتے پتے کی زباں سے تری رُوداد سنی        غنچے غنچے کے جگر کو ترا خواہاں دیکھا
  • مئی
1971
عبدالرحمن عاجز
ہے نامِ محمد ؐ سے عیاں شانِ محمدؐ      جو شانِ محمدؐ ہے وہ شایانِ محمدؐ
شاہانِ زمانہ کی حقیقت کو نہ پوچھو      شاہانِ زمانہ ہیں غلامانِ محمدؐ
ہوتا ہے رَفَعْنَا لَکَ ذِکْرَک سے یہ ثابت     خود ربّ محمدؐہے ثنائ خوانِ محمدؐ