• جولائی
1984
نعیم الحق نعیم
اُس کا خیال وعلم ملا ، آگہی ملی
میں مرچکا تھا پھر سے مجھے زندگی ملی
اس کی تجلیات بہت ہی لطیف ہیں
  • دسمبر
1989
نعیم الحق نعیم
سوال وجواب
سوال:عورتوں کی ایک مجلس میں ایک مبلغہ نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے حاضر ناضر ہونے کی یہ دلیل پیش کی ہے۔کہ جب شیطان ہرجگہ موجود رہنے پر قدرت رکھتا ہے تو نبی کیوں نہیں؟جواب بالصواب سے مطمئن فرمائیں!(بیگم زبیدہ مظہرالٰہی ۔کراچی)
جواب:اولاً تو یہ بنیادی غلط ہے کہ شیطان ہر جگہ حاضر وناضر ہے ۔قرآن وحدیث میں اس کا کہیں ذکر نہیں۔البتہ اگر اس سے مقصود یہ ہے کہ شیطان بندوں کو ہر جگہ گمراہ کرتا ہے تو اس کا مطلب یہ ہے کہ شیطان اور اُس کے چیلے چانٹے ہر جگہ لوگوں کو گمراہ کرتے ہیں۔
  • جون
1983
نعیم الحق نعیم
جن کی باتوں میں شفا ہو اسےبیمار کہو
جس کی فطرت میں وفا ہو اسے غدار کہو

وہ جو حالات کی شدت سے سرراہ گر جائے
غم کے مارے ہوئے اس شخص کو میخوار کہو
  • ستمبر
1983
نعیم الحق نعیم
کتنی چیزیں ہیں کہ اُن سے ہمیں نفرت ہے بہت
اور کوئے یار میں اُن چیزوں کی وقعت ہے بہت

محفل عقل میں ہے طنعہ زنی ہم پہ، تو کیا
کوچہ عشق میں دیوانوں کی عزت ہے بہت
  • اکتوبر
1984
نعیم الحق نعیم
دو دلوں کا ربط باہم ہو گیا
ایک عالم ہم سے برہم ہو گیا
غم کی دولت کو ترستا تھا بہت
  • ستمبر
1984
نعیم الحق نعیم
 مغموم سی تھی گلشن کی فضا                                                     میں عید مبارک بھول گیا
مسموم سی تھی کچھ آب وہوا                                                  میں عید مبارک بھول گیا
ہر غنچہ وگل تھا شعلہ نما            میں عید مبارک بھول گیا