• جولائی
1978
عبدالعزیز بن باز
مضمون ہذا سماحۃ الشیخ عبد العزیز بن عبد اللہ بن باز، حفظہ اللہ کے ایک گراں قدر مقالہ بحوث ھامۃ حول الذکوٰۃ کا ترجمہ ہے۔ یہ ریاض سے شائع ہونے والے ایک ہفت روزہ مجلہ ''الدعوۃ'' سے ماخوذ ہے۔

یہ مقالہ اگرچہ مختصر ہے اور مقلدوں کی طرح اس کی تمام جزئیات سے اتفاق کرنے میں ہمیں کچھ تردد ہے تاہم اپنے موضوع پر نہایت گراں قدر مقالہ ہے۔
  • مئی
1978
عبدالعزیز بن باز
سماحۃ الشیخ عبدالعزیز بن عبداللہ بن باز حفظہ اللہ ۔ سعودی عرب کے ایک متبحر عالم دین ہیں۔ دیگر اداروں کے علاوہ آپ ادارہ فتویٰ سازی کے رئیس عام او رنگران اعلیٰ ہیں۔ آپ کے اکثر فتاوے عرب رسالوں اور اخبارات کی زینت بنتے رہتے ہیں۔ گزشتہ سال عربی کے ایک اخبار ''عکاز'' عدد نمبر 3560 بروز ہفتہ موافق 28؍2۔1396ھ میں ایک خبر شائع ہوئی تھی
  • فروری
2007
عبدالعزیز بن باز
اُمت ِمسلمہ اس وقت اندوہناك صورتحال سے دوچار ہے- اسے داخلى طور پر كئى كمزوريوں اور كوتاہيوں كا سامنا ہے تو بيرونى طور پر وہ كئى سازشوں اور عسكرى جارحيتوں كا شكار ہے- ايسى پريشان كن صورتحال ميں مسلم اُمہ كے عظيم الشان اجتماع 'حج بيت اللہ' اور روحانى مركز 'مكہ معظمہ' سے ان مسائل كى كيا تشخيص كى جاتى اور ان كے حل كے لئے كيا لائحہ عمل پيش كيا جاتا ہے؟
  • مارچ
  • اپریل
1978
عبدالعزیز بن باز
ہم اگرچہ انگریز کی غلامی کی زنجیر سے جسمانی طور پر رُبع صدی سےزائد عرصہ سے نجات حاصل کرچکے ہیں تاہم ہمارے اذہان ابھی تک اس کی تقلیدمیں گرفتار ہیں۔ ہمارے ارباب حل و عقد اور مسند اقتدار پرمتمکن حضرات تو ہر معاملہ میں برطانوی سامراج کے قوانین ، رسم و رواج اور دیگر معاملات میں ان کی تقلید اور ان کےوضع کردے قوانین کی روشنی میں اپنی روزمّرہ زندگی کے معمولات کو اپنانا اپنے لیےموجب صد افتخار سمجھتے ہیں اور کامیابی کا باعث تصور کرتے ہیں او ران کے خلاف طرز حکومت میں اپنی ذلت او رناکامی محسوس کرتے ہیں۔