• ستمبر
1984
عبدالمنان نورپوری
"نورستان میں وہاں کے سلفی حضرات نے"دولت انقلابی اسلامی افغانستان" کے نام سے خالص کتاب وسنت کی بنیادوں پر اسلامی حکومت کی داغ بیل ڈالی ہے۔لیکن افسوس کہ جب سے اس حکومت کا قیام عمل میں آیا ہے،مختلف تنظیموں کی طرف سے اس کے خلاف پروپیگنڈہ حتیٰ کہ بغض باطن کا اظہار کیا رہا ہے۔جس کا مرکزی نقطہ اس حکومت کو دہریہ،روس نواز چین نواز اورنیشنلسٹ وغیرہ ثابت کرنا ہے۔پاکستانی علماء اہل حدیث نے اس حکومت سے متعلق سن کر جہاں مسرت کا اظہار کیا۔ وہاں وہ اس ٖغلط پروپیگنڈہ کی اصلیت جاننے کے لئے بیتاب بھی ہوئے۔چنانچہ علماء اہلحدیث کا پہلا وفد مولانا گھر جاکھی (گوجرانوالہ) کی معیت میں نورستان پہنچا۔اوروہاں کے حالات معلوم کیے۔اس کے بعد گزشتہ رمضان المبارک میں دوسرا وفد شیخ الحدیث مولانا حافظ عبدالمنان صاحب(گوجرانوالہ) کی معیت میں نورستان کا دورہ کرکے لوٹا ہے۔
  • مئی
1986
عبدالمنان نورپوری
آج کل ملک میں بالعموم اور علمی حلقوں میں بالخصوص یہ بحث چل رہی ہے کہ ''ایسے احکام، جو امت کے مسلّمہ اور مستند فقہاء مجتہدین نے قرآن پاک، سنت رسول اللہ ﷺ او راجماع امت سے قیاس و اجتہاد کے ذریعے مستنبط کرکے مدون کیے ہیں، شریعت کے احکام متصور ہوتے ہیں یا نہیں؟'' ایک گروہ کا خیال ہے کہ وہ شریعت کے احکام متصور ہوتے ہیں۔لیکن دوسرے گروہ کا عقیدہ ہے کہ وہ شریعت کے احکام متصور نہیں
  • جولائی
2002
عبدالمنان نورپوری
جناب حافظ حسن مدنی السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
'محدث' باقاعدہ ارسال کرنے پر جناب کا شکرگزار ہوں۔ د ل کی گہرائیوں سے دُعا نکلتی ہے کہ اللہ تعالیٰ اس مجلہ کو دن دوگنی، رات چوگنی ترقی عطا فرمائے، نیز آپ کے دیگر دینی کاموں اور اداروں میں برکت ڈالے۔ آمین یا ربّ العٰلمین!