• جون
2010
ابو الجلال ندوی

حب ِمال، جمع مال، تکاثر اور دولت کو معیارِ توقیر بنانے کے خلاف وعظ و پند کے بعد اللہ نے عربوں کے مالی نظام کی اِصلاح کی خاطر سورئہ حاقہ میں ایک جہنمی کے جہنمی ہونے کی وجہ یہ بتائی:
{إِنَّہٗ کَانَ لَا یُؤْمِنُ بِاﷲِ الْعَظِیْمِé وَلَا یَحُضُّ عَلٰی طَعَامِ الْمِسْکِیْنِ } (الحاقہ:۳۳،۳۴)

  • اپریل
2010
ابو الجلال ندوی
فاضل مضمون نگار نے ۱۹۱۴ء میں ندوۃ العلما، لکھنؤ سے سند ِفراغت حاصل کی، دارالمصنّفین کے جریدے 'معارف' کی مجلس ادارت کے رکن رہے اور متعدد موضوعات پر تحقیق کی۔ آپ قدیم زبانوں کے عالم تھے جن میں عبرانی، سریانی، حمیری، سبائی قابل ذکر ہیں۔ متداول علوم اسلامیہ کے علاوہ توارۃ وانجیل پر بھی عبور حاصل کیا۔۱۹۸۴ء میں کراچی میں وفات پائی۔