• اپریل
1972
سیف اللہ سپرا
﴿وَما نَقَموا إِلّا أَن أَغنىٰهُمُ اللَّهُ وَرَ‌سولُهُ مِن فَضلِهِ...٧٤﴾... سورة التوبة

ان منافقوں نے صرف اس بات کا انتظام لیا ہے کہ اللہ تعالیٰ اور اس کے رسول نے (اللہ) کے فضل سے انہیں غنی بنا دیا۔

تمہیدی گزارشات:
  • مارچ
2005
سیف اللہ سپرا
دنيا ميں اس وقت زمينوں كى بجائے ذہنوں پر حكومت كى جاتى ہے اور ابلاغى قوت كے بهر پور استعمال سے افراد اور حكومتوں كى كايا پلٹى جاتى ہے-اس ابلاغى قوت كا بهرپور استعمال جس طرح يہودى كرتے ہيں، افسوس كہ مسلمانوں كو اس كا ادراك وشعور نہيں-دنيا كے مالدار لوگ اگر مسلمان ہيں تو ان كى دولت سے بهى فائدہ غير مسلم ہى اُٹهاتے ہيں جو صرف تحفظ كے نام پر يورپى بنكوں ميں پڑى گلتى سٹرتى ہے جس سے يا تو مغربى معيشت ترقى كرتى ہے يا پهر اس دولت كو امن عالم كو درپيش خطرہ كے نام پر منجمد كركے ہضم كرليا جاتا ہے-
  • جولائی
  • اگست
1979
حسنین محمد مخلوف
سابق مفتی دیار مصر فضیلۃ الشیخ حسنین محمد مخلوف کا فتویٰ اسلام میں سنّت نبویؐ کا مقام نہایت ارفع و اعلیٰ ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ ہم سنّت نبوی علیٰ صاحبہا الصلوٰۃ والتسلیمات کی شمع فروزاں سے بے اعتنائی کرکے کبھی جادہ مستقیم پر گامزن نہیں ہوسکتے کیونکہ رسول خدا ﷺ نے جو کچھ فرمایا وہ قرآن پاک کی ہدایت کے خدوخال کی نشاندہی کی۔ اگر ہم سنت نبوی کو یہ کہہ کر ترک کردیں کہ ہمیں کتاب مقدس کی ہدایت کے ہوتے ہوئے کسی اور ہدایت یا رہنمائی کی ضرورت نہیں تو سخت غلطی ہے